Mushaal urges Int’l community to hold India accountable for its crimes against Kashmiris

مشال نے بین الاقوامی برادری پر زور دیا کہ وہ کشمیریوں کے خلاف ہونے والے جرائم کے لیے بھارت کو جوابدہ ٹھہرا دیا

حریت رہنما یاسین ملک کی اہلیہ مشعال حسین ملک کا کہنا ہے کہ بی جے پی کی قیادت والی مودی حکومت کی جانب سے آر ایس ایس سے متاثر ہندوتوا نظریہ بھارت میں ’غیر ملکی سرمایہ کاری‘ کے لیے ایک بڑا خطرہ ہے۔

ریڈیو پاکستان کے نیوز اینڈ کرنٹ افیئرز چینل کے ساتھ ایک خصوصی انٹرویو میں انہوں نے کہا کہ نریندر مودی کی انتہا پسند، اقلیتوں اور مسلم مخالف پالیسیوں کی وجہ سے بڑے بین الاقوامی کھلاڑی بھارت میں سرمایہ کاری نہیں کریں گے۔ اس سے علاقائی امن و استحکام کو شدید خطرات لاحق ہیں۔

مشال ملک نے کہا کہ فاشسٹ نریندر مودی اور بھارتی فوج بھارتی غیر قانونی مقبوضہ جموں و کشمیر میں بھارتی شہریوں کو ڈومیسائل جاری کر کے کشمیریوں کو وادی میں اقلیت میں تبدیل کر رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ نئی دہلی حکومت کشمیریوں کے جذبہ آزادی کو کم کرنے کی ہر ممکن کوشش کر رہی ہے لیکن تمام منفی ہتھکنڈوں سے ان کی تحریک آزادی کے عزم کو تقویت ملے گی۔

انہوں نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ پورا ہندوستان انتہا پسند نظریہ کے کنٹرول میں ہے، جس سے ہندوستانی معاشرے کے تانے بانے کو خطرہ ہے، جہاں اقلیتوں کو منظم طریقے سے نشانہ بنایا جا رہا ہے۔

5 اگست 2019 کے بھارت کے غیر قانونی اور یکطرفہ اقدامات کے بارے میں بات کرتے ہوئے مشال حسین ملک نے رائے دی کہ نئی دہلی بیرونی لوگوں کو حق رائے دہی دے کر مقبوضہ وادی میں “شناخت کا بحران” پیدا کرنے کی کوشش کر رہا ہے۔

انہوں نے عالمی برادری پر زور دیا کہ وہ بھارت کو اس کے غیر قانونی اقدامات کے لیے جوابدہ ٹھہرائے اور ملک کو دفاعی اور اقتصادی پابندیوں کے دائرے میں لائے۔

انہوں نے کہا کہ یہ صحیح وقت ہے جب عالمی برادری بھارت کو کشمیری عوام کے خلاف اس کے ناقابل بیان جرائم کا جوابدہ ٹھہرائے، انہوں نے مزید کہا کہ کشمیر کے دیرینہ تنازعہ کو حل کیے بغیر جنوبی ایشیا میں پائیدار امن اور خوشحالی قائم نہیں ہو سکتی۔

مشعال ملک نے افسوس کا اظہار کیا کہ ان کے شوہر یاسین ملک کو ڈیتھ سیل میں رکھا گیا ہے جہاں ان کی جان کو خطرہ ہے۔ انہوں نے کہا کہ اقوام متحدہ، سلامتی کونسل، یورپی یونین اور دیگر عالمی ادارے مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر خاموش تماشائی بنے ہوئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ یاسین ملک کے حوصلے اور عزم کو منفی ہتھکنڈوں سے شکست نہیں دی جا سکتی۔

انہوں نے کہا کہ وہ وقت دور نہیں جب بھارت کو اس کے مظالم کا جواب دیا جائے گا۔

مشعال حسین ملک نے کہا کہ طاقت کے وحشیانہ استعمال سے کشمیریوں کی آواز اور ان کی جدوجہد آزادی کو دبایا نہیں جا سکتا۔

ایک سوال کے جواب میں مشال ملک نے کہا کہ بھارتی قابض افواج کی جانب سے قتل و غارت کی مسلسل لہر، کشمیریوں اور انسانی حقوق کے محافظوں کی جان بوجھ کر گرفتاریاں اور شہداء کی میتیں ان کے ورثاء کے حوالے کرنے سے انکار دنیا بھر کے لوگوں کے لیے انتہائی تشویشناک ہے۔

شہید بزرگ حریت رہنما سید علی گیلانی کو ان کی پہلی برسی پر زبردست خراج عقیدت پیش کرتے ہوئے مشعال ملک نے کہا کہ کشمیری اپنی جدوجہد آزادی کو اس کے منطقی انجام تک جاری رکھیں گے۔

انہوں نے کہا کہ کشمیر کاز کے لیے سید علی گیلانی کی سیاسی جدوجہد، غیر متزلزل اور انتھک خدمات کشمیر کی تاریخ میں طویل عرصے تک یاد رکھی جائیں گی۔

انہوں نے کہا کہ سید علی گیلانی نے اپنی پوری زندگی کشمیری عوام کے حق خودارادیت کی حمایت کی اور اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں اور کشمیریوں کی خواہشات اور امنگوں کے مطابق تنازعہ کشمیر کے حل کی وکالت کی۔

مشعل ملک نے کہا کہ IIOJK کے لوگ کشمیریوں کے حق خودارادیت کے لیے جاری جدوجہد میں سید علی گیلانی کے عزم، لگن اور شراکت کو ہمیشہ یاد رکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سید علی گیلانی نے اپنی پوری زندگی کشمیر کاز، کشمیری عوام اور ان کے حق خودارادیت کے لیے وقف کر دی۔

Leave a Comment

Your email address will not be published.